چینی درخت سے حاصل شدہ مرکب کینسر سے لڑنے میں مددگار

صحت
3 ہفتے پہلے
Image

نیویارک: ایک نئی تحقیق سے انکشاف ہوا ہے کہ چین میں معدومیت کے خطرے سے دوچار چیڑ یا صنوبر کے درخت سے ایک مرکب حاصل کیا گیا ہے جو کئی اقسام کے کینسر میں مفید ثابت ہوسکتا ہے۔

اس درخت کو انگریزی میں fir کہا جاتا ہے جس سے حاصل ہونے والا ایک مرکب دیگر دواؤں کے ساتھ استعمال کرنے سے کینسر میں افاقہ ہوسکتا ہے۔ امریکا میں پورڈیو یونیورسٹی سے وابستہ ڈاکٹر منگجی نے ڈائی چینی صنوبر کے درخت Abies beshanzuensis میں ’کمپاؤنڈ 29‘ مرکب دریافت کیا ہے۔



کمپاؤنڈ 29 ایک پروٹین SHP2 کو روکنے میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔ یہ اینزائم چھاتی، منہ، گیسٹرک، جگر، پھیپھڑے ، لیوکیمیا اور دیگر اقسام کے سرطان میں مفید ثابت ہوسکتا ہے۔ ایک عرصے سے ادویہ ساز ادارے ایس ایچ پی ٹو کو ہدف بنانے کی کوشش کررہے ہیں اور اسے قابو کرکے سرطانی گومڑوں کو ختم کیا جاسکتا ہے۔

اب ماہرین نے ایک نیا کمپاؤنڈ بنایا ہے جسے کمپاؤنڈ 30 کا نام دیا گیا ہے یہ ایس ایچ پی ٹو پروٹین سے چپک جاتا ہے اور اس سے مضبوط بند (بونڈ) بناتا ہے تاہم اس پر مزید غور کرنا باقی ہے۔

کمپاؤنڈ 30 جب ایس ایچ پی ٹو سے چپکتا ہے تو وہ مزید ایس ایچ پی ٹو پروٹین کو کھینچتا ہے لیکن اسے مزید طاقتور بنانے کے لیے اسے دیگر کئی ادویہ کے ساتھ استعمال کرنے کی ضرورت ہے. اس دریافت سے کئی اقسام کے کینسر کے علاج کی راہ ہموار ہوئی ہے۔