ایغور موسیقار کی زیر حراست ہلاکت کا ترکی دعویٰ مسترد، چین نے ویڈیو جاری کردی

Image

بیجنگ: چین نے حراستی کیمپ میں اویغور مسلمان موسیقار کی ہلاکت کے ترکی دعویٰ کو مسترد کرتے ہوئے عبدالرحیم حیات کا ویڈیو بیان جاری کردیا۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق چین نے اویغور مسلمان موسیقار عبدالرحیم حیات کی حراستی کیمپ میں تشدد سے ہلاکت کے ترکی دعویٰ کو مسترد کرتے ہوئے مسلم موسیقار کی ویڈیو نشر کردی ہے۔

چین کی جانب سے جاری ویڈیو میں موجود شخص موسیقار عبدالرحیم حیات ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے کہتا ہے کہ ’میں خیریت سے اور مکمل طور پر صحت یاب ہوں۔ چین نے ترکی کو کسی بھی قسم کا الزام عائد کرنے سے پہلے حقائق کو جانچنے اور بے جا الزمات سے گریز کرنے کا مشورہ بھی دیا۔

Abdurrehim Heyit ölmedi, Türkiye Dışişleri’nin #Xinjiang iddiaları asılsız. Abdurrehim Heyit’in sağlık durumunun iyi olduğu açıklandı. https://t.co/cqmcyeVS2s @TC_Disisleri @TurkEmbBeijing @anadoluajansi @trthaber @ntv @cnnturk @Hurriyet @Postacomtr #AbdurrehimHeyit pic.twitter.com/hFryakReEr

— CRI Türkçe (@CRI_Turkish) February 10, 2019



چین میں اویغور مسلمانوں کے لیے کام کرنے والی تنظیم کے عہدیدار نوری ترکل نے ویڈیو کو پُر اسرار اور شکوک سے بھرا قرار دیتے ہوئے کہا کہ ویڈیو پرانی بھی ہوسکتی ہے جس کی ماہرین سے جانچ کرایا جانا بے حد ضروری ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں : موسیقار کا زیر حراست قتل، ترکی کا چین سے احتجاج

واضح رہے کہ ترکی کے وزارت خارجہ کے ترجمان نے گزشتہ روز اپنے بیان میں چین کے حراستی کیمپ میں اویغور مسلم موسیقار کی ہلاکت کا انکشاف کرتے ہوئے چین سے حراستی کیمپ بند کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔