سانحہ ماڈل ٹاؤن: نوازشریف سے جیل میں تفتیش کا فیصلہ

قومی
2 ہفتے پہلے
Image

فائل فوٹو: میاں نوازشریفاسلام آباد: سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تحقیقاتی ٹیم کو سابق وزیراعظم سے جیل میں تفتیش کی اجازت دے دی گئی۔ سانحہ ماڈل ٹاؤن پر باقر نجفی رپورٹ کو عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنانے کا حکم سپریم کورٹ نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس کی سماعت کرنے والے اے ٹی سی جج کی چھٹی منسوخ کردی، روزانہ سماعت کرنے کا حکم پنجاب پولیس کے ڈی ایس پی محمد اقبال کی جانب اسلام آباد کی احتساب عدالت میں درخواست دائر کی گئی جس میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ نوازشریف ماڈل ٹاؤن کے مقدمے میں ملزم نامزد ہیں ان سے جیل میں تفتیش کی اجازت دی جائے۔احتساب عدالت کے جج محمد ارشد ملک نے پنجاب پولیس کی درخواست پر سماعت کی، اس دوران نیب نے پولیس کی درخواست کی مخالفت کی اور مؤقف اپنایا کہ نوازشریف سے تفتیش کے لیے پنجاب پولیس ہائیکورٹ سے رجوع کرے۔عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد پنجاب پولیس کی درخواست منظور کرتے ہوئے نوازشریف سے جیل میں تفتیش کی اجازت دے دی۔سانحہ ماڈل ٹاؤن کا پس منظریاد رہے کہ 17 جون 2014 کو مسلم لیگ (ن) کے دورِ حکومت میں لاہور کے علاقے ماڈل ٹاؤن میں پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری کی رہائش گاہ کے سامنے قائم تجاوزات کو ختم کرنے کے لیے پولیس کی جانب سے آپریشن کیا گیا۔ سپریم کورٹ کا سانحہ ماڈل ٹاؤن پر نئی جے آئی ٹی بنانے کا حکم جے آئی ٹی کی فائنڈنگز کو سامنے لایا جائے اور ٹرائل کا حصہ بنایا جائے، سپریم کورٹ کا حکم، سانحہ ماڈل ٹاؤن پر درخواست نمٹادی پی اے ٹی کے کارکنوں کی مزاحمت اور پولیس آپریشن کے نتیجے میں 14 افراد جاں بحق ہوئے جن میں خواتین بھی شامل تھیں جب کہ پولیس کی فائرنگ سے درجنوں افراد زخمی بھی ہوئے۔