نیوزی لینڈ میں مساجد پر فائرنگ، بنگلادیشی کرکٹ ٹیم حملے میں بال بال بچ گئی

اہم
3 دن پہلے
Image

کرائسسٹ چرچ: کرائسٹ چرچ میں دہشتگردوں کی مساجد پر فائرنگ کے وقت بنگلادیشی ٹیم بھی وہاں موجود تھی تاہم تمام کھلاڑی بال بال بچ گئے۔

نیوزیلینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی 2 مساجد دہشت گردوں کی فائرنگ کے نتیجے میں 40 افراد جاں بحق جب کہ متعدد زخمی ہوگئے، حملے کے وقت مسجد میں بنگلادیشی کرکٹ ٹیم موجود تھی تاہم تمام کھلاڑی بال بال بچ گئے۔

بنگلادیشی کرکٹ ٹیم کے کپتان تمیم اقبال نے ٹوئٹر پر کہا کہ دہشت گرد حملے کے وقت ٹیم مسجد میں موجود تھی تاہم سارے کھلاڑی محفوظ ہیں، ہمارے لیے یہ بہت بھیانک واقعہ ہے، ہمیں دعاؤں میں یاد رکھیں۔

Entire team got saved from active shooters!!! Frightening experience and please keep us in your prayers #christchurchMosqueAttack

— Tamim Iqbal Khan (@TamimOfficial28) March 15, 2019



ایک اور بنگلادیشی کھلاڑی مشفیق الرحیم نے بھی سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر کہا کہ کرائسٹ چرچ میں حملے کے وقت ہم محفوظ رہے تاہم ایسا بھیانک واقعہ دوبارہ نہیں دیکھنا چاہتے۔

Alhamdulillah Allah save us today while shooting in Christchurch in the mosque…we r extremely lucky…never want to see this things happen again….pray for us

— Mushfiqur Rahim (@mushfiqur15) March 15, 2019



بنگلا دیش کرکٹ بورڈ کی جانب جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ کرائسٹ چرچ میں دہشت گرد حملے میں تمام کھلاڑی محفوظ ہیں، دوسری جانب کرائسٹ چرچ کی مساجد میں دہشتگردی کے بعد بنگلا دیش کرکٹ ٹیم نے دورہ نیوزی لینڈ ختم کردیا ہے اور کھلاڑیوں کو واپس بلالیا ہے، دونوں ملکوں کے کرکٹ بورڈز نے دورے کی منسوخی کا مشترکہ فیصلہ کیا۔

All members of the Bangladesh Cricket Team in Christchurch, are safely back in the hotel following the incident of shooting in the city.

The Bangladesh Cricket Board is in constant contact with the players and team management.#ChristchurchMosqueAttack pic.twitter.com/TTpIFxLp05

— Bangladesh Cricket (@BCBtigers) March 15, 2019



نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جسینڈا آرڈرن نے نیوز کانفرنس کے دوران مساجد پر حملوں کو دہشت گردی کا واقعہ قرار دیتے ہوئے حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ حملہ منصوبہ بندی سے کیا گیا اور اس کی تحقیقات کررہے ہیں۔